" فروغِ نعت خانیوال " کی پندرہ روزہ نعتیہ نشست (19۔ اگست 2016 بروز جمعہ)

'اکادمی فروغ نعت خانیوال' میں موضوعات آغاز کردہ از شاکرالقادری, ‏اگست 19, 2016۔

  1. شاکرالقادری

    شاکرالقادری نعت گوئی مراحوالہ ہے رکن انتظامیہ رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    272
    الحمداللہ آج بروز جمعۃ المبارک بوقت شام ساڑھے پانچ بجے " فروغِ نعت خانیوال " کی پندرہ روزہ نعتیہ نشست غضنفر ادب اکیڈمی پاکستان کے مرکزی دفتر میں منعقد ھوئی
    نشست کا آغاز حسبِ روایت تلاوتِ قرآن سے کیا گیا بعد ازاں نعتِ رسولِ کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وبارک وسلم پیش کی گئی جسکے بعد نشست میں شریک شعراء کرام نے بارگاہِ بیکس پناہ میں گلہائے عقیدت پیش کیئے اور حاضرین سے خوب داد سمیٹی....
    نشست کے اختتام پر استاذِ محترم قبلہ عباس عدیم قریشی صاحب نے ملکی و عالمِ اسلام کی سلامتی و بقا، فروغِ نعت کی ترقی اور سیّدی شاکرالقادری صاحب سمیت تمام اراکینِ فروغِ نعت کے لیئے خصوصی دعا فرمائی....یوں اس پرنور و پر کیف نشست کا اختتام ھوا
    نشست کی صدارت قبلہ عباس عدیم قریشی صاحب نے فرمائی....
    مہمانِ خصوصی پروفیسر شیر افضل جامی
    نقابت: پروفیسر مرزا حفیظ اوج
    تلاوت: یامین غوری
    نعت: حسّان شکوری
    شعراء کرام.....
    قبلہ عباس عدیم قریشی، پروفیسر ناصر عباس اطہر، پروفیسر شیر افضل جامی، پروفیسر مرزا حفیظ اوج، محسن رضا صفدر، محسن رضا شافی، سلیم رضا سمرا، مکاشف سپرا، ڈاکٹر عارش خان، فرہاد حسین رومی، یامین غوری، عاشق حسین، ندیم رضا فارق

    نمونۂ کلام.........
    حضور..جیسا پسند ہو کلام ویسا لکھوں
    حضور..حکم تو کیجے سلام کیسا لکھوں
    حضور..جیسا بلال آپ کا ھے میں تو نہیں
    حضور...کیسے میں خود کو غلام جیسا لکھوں
    عباس عدیم قریشی

    سلامی کو ہر روز سوئے مدینہ
    میں سانسوں کو جاتے بہم دیکھتا ہوں
    مزاجِ محمد کے زیرِ تصرف
    میں تحریرِ لوح و قلم دیکھتا ھوں
    ناصر عباس اطہر

    مری افسردگی پر آج رحمت آپ مائل ہے
    سنا ہے خود مسیحا جانبِ بیمار آتے ہیں
    کہیں ایسا نہیں کوئی سخی اس بزمِ عالم میں
    وہ دسترخوان سے اپنے جہاں بھر کو کھلاتے ہیں
    مرزا حفیظ اوج

    حاصل ہے آپ ہی کو فقط یہ مقامِ خاص
    خود بھیجتا ہے آپ پر رب بھی سلام خاص
    ذکرِ جمالِ اسمِ محمد کے فیض سے
    میرا کلام بن گیا صفدر کلامِ خاص
    محسن رضا صفدر

    بجز درود بھلا کونسا ھے امر یہاں
    جو رب کی ذات سے مخلوق تک روا ہو جائے
    وہ اس جہاں میں بھلا سرخرو نہ ہو کیسے
    جو اُنکے اسوہء حسنہ سے آشنا ھو جائے
    فرہاد حسین رومی

    کونین کو دیتا ھے خدا یار کا صدقہ
    کھاتے ہیں سبھی سیدِ ابرار کا صدقہ
    آقا مری آنکھوں کی بھی اب پیاس بجھا دیں
    قرنی کی شہا حسرتِ دیدار کا صدقہ
    سلیم رضا سمرا

    ارے ناداں....مقامِ خاموشی ھے
    تجھے اے دل دھڑکنے کی پڑی ھے
    محب انکا خدائے لم یزل خود
    محبت سنّتِ ربّ النبی ہے
    ڈاکٹر عارش خان

    حسنِ قمر کا ھو گیا عقدہ مرے دل پر عیاں
    ملتا رھا ھوگا وہ رخ پر خاکپائے مصطفیٰ
    پہنچوں لحد میں تو فرشتے دیکھ کر مجھ کو کہیں
    یہ تو وہی دیوانہ ھے غوری فدائے مصطفیٰ
    یامین غوری

    دشوار تر تھا مرحلۂ جاں کَنی گر
    وردِ زباں درود نے آسان کر دیا
    بس میں نے " یارسول اغثنی" کہا ہے اور
    سب مشکلوں کو الٹا پریشان کر دیا
    تحریر: ندیم رضا فارق
    • پسندیدہ پسندیدہ x 2
    Last edited: ‏اگست 19, 2016
  2. ذوالفقار نقوی

    ذوالفقار نقوی New Member رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    18
    ماشااللہ ۔۔۔جزاک اللہ
    • متفق متفق x 1
  3. شاہ بابا

    شاہ بابا فضائے نعت میں رہنے سے دل دھڑکتا ہے رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    619
    ماشاءاللہ. اللہ کریم قبول فرمائے
  4. مرزا حفیظ اوج

    مرزا حفیظ اوج New Member رکن فروغ نعت

    پیغامات:
    6

اس صفحے کو مشتہر کریں